سردی کی چین میں نمونیا کی پراسرار بیماری…کرناٹک حکومت نے اب ایک ایڈوائزری جاری کی ہے۔ ریاستی محکمہ صحت نے تمام اسپتالوں کو الرٹ کیا ہے

کورونا کے بعد ان دنوں چین میں نمونیا کی پراسرار بیماری نے خوف و ہراس پھیلا رکھا ہے۔ یہاں کے بچوں میں سانس کی بیماریاں مسلسل بڑھ رہی ہیں۔ صورتحال یہ ہے کہ چین میں اسکول بند کردیئے گئے ہیں۔ یہاں کے ہسپتالوں میں مریضوں کی لمبی قطاریں لگی ہوئی ہیں۔ حالات بد سے بدتر ہوتے جا رہے ہیں۔ دوسری جانب ڈبلیو ایچ او بھی اس معاملے پر نظر رکھے ہوئے ہے۔ ساتھ ہی ماہرین کا خیال ہے کہ یہ بیماری بھی کورونا کی طرح متعدی ہے۔

چین کے اس پراسرار نمونیا نے دیگر ممالک میں بھی خوف و ہراس پھیلا دیا ہے۔ بھارت بھی اس حوالے سے پوری طرح چوکنا ہے۔ وزارت صحت اس پر نظر رکھے ہوئے ہے۔ بیماری کے پیش نظر کئی ریاستوں نے ایڈوائزری بھی جاری کی ہے۔ لگاتار بڑھتے ہوئے معاملات کو دیکھتے ہوئے کرناٹک حکومت نے اب ایک ایڈوائزری جاری کی ہے۔ ریاستی محکمہ صحت نے تمام اسپتالوں کو الرٹ کیا ہے اور انہیں صورتحال سے نمٹنے کے لیے تیار رہنے کو کہا ہے۔

کرناٹک کے محکمہ صحت نے ریاست کے تمام شہریوں کو موسمی فلو سے محتاط رہنے کو کہا۔ موسمی فلو کے بارے میں حکومت نے کہا ہے کہ یہ عام طور پر پانچ سے سات دن تک رہتا ہے۔ یہ بچوں، بوڑھوں، حاملہ خواتین اور کم قوت مدافعت والے لوگوں کے لیے خطرہ ہے۔ اس کے ساتھ ہی حکومت نے ایڈوائزری میں اس کی علامات کے بارے میں بھی بتایا ہے۔

یہ علامات ہیں۔

بخار، سردی لگ رہی ہے
بیمار محسوس کرنا، تھکاوٹ محسوس کرنا
بھوک میں کمی، متلی
چھینک اور خشک کھانسی
ایڈوائزری میں یہ بھی بتایا گیا ہے کہ کسی بھی قسم کے انفیکشن سے بچنے کے لیے کیا کرنا چاہیے اور کیا نہیں کرنا چاہیے۔

کھانستے یا چھینکتے وقت منہ اور ناک کو ڈھانپنا
بار بار ہاتھ دھونا
چہرے کو غیر ضروری چھونے سے گریز کریں۔
پرہجوم جگہوں پر ماسک کا استعمال
یہ بھی پڑھیں: کیا چین کا نمونیا کورونا کی نئی شکل ہے؟ ڈریگن کی وباؤں کو چھپانے کی پرانی عادت ہے۔

راجستھان میں بھی ایڈوائزری جاری

اس کے علاوہ راجستھان کے محکمہ صحت نے چین میں نمونیا کے بڑھتے ہوئے معاملات کو دیکھتے ہوئے ریاست کے تمام ضلع اسپتالوں اور میڈیکل کالجوں کے لیے ایک ایڈوائزری جاری کی ہے۔ جس کے مطابق ڈائریکٹوریٹ آف میڈیکل اینڈ ہیلتھ سروسز کے ڈائریکٹر نے راجستھان کے تمام میڈیکل کالجوں کے پرنسپلوں، چیف میڈیکل آفیسرز اور تمام چیف میڈیکل آفیسرز کے ساتھ ساتھ پرائیویٹ اسپتالوں کو بھی نظر رکھنے کو کہا ہے۔

مرکزی حکومت نے نگرانی رکھنے کی ہدایت دی تھی۔

اس سے قبل مرکزی حکومت نے تمام ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں کو ہدایات جاری کی تھیں۔ حکومت نے تمام ریاستوں پر زور دیا تھا کہ وہ اپنی صحت کی خدمات اور اسپتال کی تیاریوں اور بیماری کے جواب میں اقدامات کا جائزہ لیں۔ مرکزی وزارت صحت نے ایک ایڈوائزری جاری کرتے ہوئے کہا تھا کہ فی الحال صورتحال اتنی تشویشناک نہیں ہے، پھر بھی چین کی صورتحال کو دیکھتے ہوئے چوکنا رہنا ضروری ہے۔

Latest Indian news

Popular Stories

error: Content is protected !!