کم نعمت والیوں کو ہدفِ تنقید نہ بنایاجائے، اللہ کی طرف دوڑنے کی خواتین کو تلقین

درس ِ قرآن اور درسِ حدیث کے ذریعہ بارودگلی کی خواتین کے اجتماع سے وائفہ اشرف اور محمد ی آنٹی کاخطاب

بیدر۔15/نومبر۔ محترمہ وائفہ اشرف خان کارکن جماعت اسلامی ہند بیدر نے آج چہارشنبہ کی سہ پہر کو سورہ الحجرات کی منتخبہ آیات کادرس خواتین کے ایک اجتماع میں دیا۔ بارودگلی بیدر میں واقع لطیف سیٹھ کے مکان پر منعقدہ اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے انھوں نے کہاکہ مرد مردوں کااور عورتیں عورتوں کامذاق نہ اڑانے کی تلقین قرآن کررہاہے۔ قرآ ن یہ بھی کہہ رہاہے کہ ایک دوسرے کو برے القاب سے یاد نہ کریں۔ یہ برائی تب پیداہوتی ہے جب انسان غروروتکبر کی حالت میں ہوتاہے۔ خود کو بڑاسمجھنے اور سامنے والے کو کمتر سمجھنے سے یہ فاسدخیالات پید ا ہوتے ہیں۔ محترمہ وائفہ اشرف نے مزید بتایاکہ اللہ تعالیٰ نے انسانوں میں اپنی نعمتیں کم اور زیادہ میں تقسیم کررکھی ہیں۔ کسی کارنگ کالاہے، کسی کارنگ گوراہے، کسی کو کمزور اور کسی کوطاقت ور بنایاہے، کسی کو دولت مند اور کسی کو غربت دی ہے، کوئی ذہین ہے اور کوئی ذہانت میں پیچھے ہے۔ چوں کہ انسانوں کومساوی نعمتوں سے نہیں نوازا ہے، لہٰذا اس کی بنیاد پر ہدف تنقید نہ بنایاجائے اور نہ ہی برتری کا احساس اپنے اندر پیداہوناچاہیے۔ محترمہ محمدی آنٹی کارکن جماعت اسلامی ہند بیدر نے درسِ حدیث دیتے ہوئے کہاکہ اللہ تعالیٰ جس کسی کو ہدایت دیتاہے، ایسی دینی مجالس میں شرکت کی توفیق عطا کرتاہے۔ اس کی ہدایت اور اس کے حکم کے بغیر کوئی کام انجام نہیں دیاجاسکتا۔ محمد ی آنٹی نے ایک اور حدیث پیش کرتے ہوئے کہاکہ انسان جب اللہ کی طرف چلتاہواآتاہے تورسول اللہ ﷺ نے فرمایاکہ اللہ تعالیٰ اس انسان کی طرف دوڑ کرآتاہے۔اس لئے ہمیں بھی اللہ کی طرف دوڑنے کی اپنی سی کوشش اور سعی کرنی چاہیے۔ محترمہ نے ذکر سے متعلق کہاکہ ہمیشہ ہماری زبانیں اللہ تعالیٰ کے ذکر سے تررہنی چاہیے۔ کیوں کہ اللہ کے ذکر سے ہی دِلوں کواطمینان نصیب ہوتاہے۔ محمد ی آنٹی کی دعا پر اجتماع اختتام کو پہنچا۔

Latest Indian news

Popular Stories

error: Content is protected !!