بنگال بی جے پی لیڈر سبیاساچی گھوش جسم فروشی کا ریکٹ چلانے کے الزام میں گرفتار

مغربی بنگال کے بی جے پی لیڈر سبیاساچی گھوش کو جمعہ کو ہاوڑہ ضلع میں ان کے ہوٹل سے جسم فروشی کا ریکیٹ چلانے کے الزام میں گرفتار کیا گیا ۔ یہ معاملہ ایسے وقت سامنے آیا ہے جب سندیشکھلی کو لے کر بی جے پی حکمراں ترنمول کانگریس پر مسلسل حملہ کر رہی ہے۔ جہاں کئی خواتین نے ٹی ایم سی کے مضبوط لیڈر شیخ شاہجہان کے ساتھیوں پر جنسی استحصال کا الزام لگایا ہے۔
انڈیا ٹوڈے کی رپورٹ کے مطابق بی جے پی پر حملے کو تیز کرتے ہوئے، ٹی ایم سی نے اپنے آفیشل ہینڈل پر ایک پوسٹ میں کہا، ‘بی جے پی بنگال کے لیڈر سبیاساچی گھوش کو ہاوڑہ کے سنکریل میں اپنے ہوٹل میں نابالغ لڑکیوں کی جسم فروشی کا ریکیٹ چلاتے ہوئے پکڑا گیا ہے۔ پولیس نے 11 ملزمان کو گرفتار کرکے 6 متاثرین کو بازیاب کرالیا۔ ٹی ایم سی نے مزید لکھا کہ یہ بی جے پی ہے، یہ بیٹیوں کی حفاظت نہیں کرتے، دلالوں کی حفاظت کرتے ہیں۔
گرفتار لوگوں کو جمعرات کو ہاوڑہ کی پوکسو عدالت میں پیش کیا گیا۔ عدالت نے ہوٹل کے مالک سبیاساچی گھوش اور منیجر کو 7 دن کی پولیس حراست میں بھیج دیا۔ اس معاملے میں مغربی بنگال کے وزیر اروپ رائے نے کہا ‘ریاست کے بی جے پی لیڈر مختلف سماج دشمن سرگرمیوں میں ملوث ہیں۔ چند روز قبل بی جے پی کے ایک لیڈر کو گانجہ اسمگلنگ کے الزام میں گرفتار کیا گیا تھا۔ پولیس انتظامیہ ان کے خلاف قانونی کارروائی کرے گی۔ میں اس سلسلے میں پولیس کمشنر سے بھی بات کروں گا۔ ساتھ ہی بی جے پی نے اسے سندیشکھلی معاملے سے توجہ ہٹانے کے لیے ٹی ایم سی کی سازش قرار دیا ہے۔

Latest Indian news

Popular Stories

error: Content is protected !!