مرکز سے بی جے پی کو ہٹانے کے لئے تلنگانہ میں کانگریس کابرسراقتدار آنا ضروری، لہٰذا کانگریس کو ووٹ دیجئےجڑچرلہ اسمبلی حلقہ میں کانگریسی قائد عبدالمنا ن سیٹھ کی رائے دہندگان کوترغیب

جڑ چرلہ۔ 22/نومبر (راست) کرناٹک پردیش کانگریس کمیٹی (کے پی سی سی) مینارٹی ڈپارٹمنٹ کے ریاستی نائب صدر جناب عبدالمنان سیٹھ تلنگانہ اسمبلی انتخابات میں جڑچرلہ اسمبلی حلقہ کے انتخابی انچارج بنائے گئے ہیں۔ وہ اس وقت جڑ چرلہ پہنچ چکے ہیں اور کانگریس پارٹی کے امیدوار انرودھ ریڈی کے حق میں برق رفتار مہم AICCکے انجینئر اسلم علیگ کے ساتھ چلارہے ہیں۔ پدیاترا، ملاقاتیں، روڈ شو کے علاوہ مینارٹیز سے خصوصی میٹنگس میں عبدالمنان سیٹھ کی بھرپور شرکت ہے۔عبدالمنان سیٹھ جڑچرلہ مسلم مینارٹی سے کہہ رہے ہیں کہ کرناٹک اسمبلی سے بی جے پی کو نکالاملااور کانگریس وہاں برسراقتدار آئی ہے۔ اس جیت سے تلنگانہ اسمبلی کے تمام حلقوں خصوصاً مینارٹیز حلقوں کو اشارہ ملاہے کہ وہ بھی تلنگانہ کے 2023کے اسمبلی انتخابات میں کانگریس کوووٹ دے کر برسراقتدار لاتے ہیں تو اس سے 2024؁ء کے عام پارلیمانی انتخابا ت میں مرکز سے بی جے پی کو ہٹاکر کانگریس کولانے کااشارہ مل سکتاہے۔ بی جے پی کو ہرانا کانگریس پارٹی کافرض ہے تاکہ اوبی سی، ایس سی /ایس ٹی، اور اقلیتوں کوانصاف مل سکے۔ موصوف نے کے سی آر کے بارے میں بتایاکہ کے سی آرنے مینار ٹیز کا ووٹ لے کر اگر کچھ مینارٹیز کے حق میں کیابھی ہوگا لیکن موجودہ لڑائی بی جے پی اور کانگریس کی لڑائی ہے۔ اس لڑائی میں کانگریس کی جیت سے مرکز میں بی جے پی کوہرایا جاسکتاہے۔ مجھے امید ہے کہ اس پہلو سے جڑچرلہ اور تمام تلنگانہ کے مینارٹیز کانگریس کو ووٹ دیناپسند کریں گے۔ تلنگانہ میں کانگریس کاآنا مرکز سے بی جے پی کے جانے کاطئے شدہ سنگ میل ثابت ہوگا، اس طرف مینارٹی طبقہ بھرپور توجہ دے۔ واضح رہے کہ عبدالمنان سیٹھ کاتعلق بیدر سے ہے۔

Latest Indian news

Popular Stories

error: Content is protected !!