مخدوم سوسائٹی اور مراٹھا سیوا سنگھ کی طرف سے مولانا آزاد کو خراج تحسین پیش

مولانا آزاد نے تعلیم کو ایک قومی دھارا بنایا اور اسے عملی جامہ پہنایا – شوکت بھائی تمبولی

احمد نگر:- (عابدخان) ہندوستان کے پہلے وزیر تعلیم مولانا آزاد نے ملک کی تعلیمی ترقی اور نوجوانوں کی تربیت کی ضروریات کو مدنظر رکھتے ہوئے ایک تعلیمی پالیسی واضع کی۔ انہوں نے تعلیم کو قومی ترقی کے آلے کے طور پر نافذ کیا۔ اور اس کی وجہ سے تعلیم کے میدان میں ایک عظیم انقلاب برپا ہوا اور تعلیم کے دروازے سب کے لیے کھل گئے۔ لہذا انہیں تعلیم کی توسیع کے باپ کے طور پر دیکھا جاتا ہے، ان خیالات کا اظہار این سی پی کے ریاستی نائب صدر حاجی شوکت بھائی تمبولی نے کیا ۔
مجاہد آزادی مولانا ابوالکلام آزاد کے یوم پیدائش کے موقع پر مخدوم ایجوکیشن اینڈ ویلفیئر سوسائٹی اور مراٹھا سیوا سنگھ نے مولانا آزاد کو اُس کمرے میں خراج عقیدت پیش کیا جہاں وہ احمد نگر قلعہ میں ساڑھے تین سال تک قید تھے۔ اس موقع پر نیشنلسٹ کانگریس کے نائب صدر حاجی شوکت بھائی تمبولی، پروفیسر ڈاکٹر محبوب سید، سنجے زنجے، مراٹھا سیوا سنگھ کے انجینئر ابھیجیت واگھ، چیئرمین مولانا آزاد اتسو سمیتی کےصدر سید خلیل ، سکریٹری نثار باغبان، سلیم سہارا، گائیڈ امول باسکر، ریاض شیخ صحافی، افضل سید صحافی، ٹھاکر داس پردیشی، آرکیٹیکٹ فیروز شیخ، تنویر چشمہ والا، عمران خان حاجی انور صحافی، ساتپوتے ستیش، شفقت سید، وجے کدم، اننت راؤ گاردے، ذاکر شیخ، جمیر شیخ، بشیر شیخ، ستیش نمسے وغیرہ معززین کثیر تعداد میں موجود تھے۔
مہمان خصوصی کے طور پر موجود تھے۔ پروفیسر ڈاکٹر محبوب سید نے کہا کہ تعلیم کی اہمیت بتاتے ہوئے مولانا آزاد نے پارلیمنٹ میں کہا تھا کہ ملک کے بجٹ میں تعلیم کو اہم مقام دینا ضروری ہے۔ تعلیم کے بعد خوراک اور لباس پر عمل کیا جائے۔ ان کا کہنا تھا کہ ملک کے پانچ سالہ منصوبے کا مقصد صرف زراعت، صنعت، بجلی، مواصلاتی آلات کی ترقی نہیں ہونا چاہیے بلکہ ملک کی نئی نسل کی صحیح تعمیر کے لیے تعلیم پر بھی یکساں توجہ دی جانی چاہیے۔
اسی لیے ابتدائی دور میں ملک کا تعلیمی بجٹ دو کروڑ تھا۔ یہ 1958 میں 30 کروڑ ہو گیا۔ انہوں نے تعلیمی ترقی کے لئے ٹھوس اقدامات کئے۔ بہت سے نئے تعلیمی ادارے بنائے اور ترقی کی۔
مولانا آزاد مہوتسو کمیٹی کے صدر سید خلیل نے پروگرام کا افتتاح کیا اور عابد خان نے پروگرام کی نظامت کی۔ بھیروناتھ واکلے نے شکریہ کی رسم ادا کی.

Latest Indian news

Popular Stories

error: Content is protected !!